افتخار چودھری بدسلوکی فیصلہ محفوظ

سپریم کورٹ کے پانچ رکنی لارجر بنچ نے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری سے ۲۰۰۷ میں شاہراہ دستور پر بد سلوکی کیس کا فیصلہ گیارہ سال بعد سماعت مکمل کر کے محفوظ کر لیا ہے ۔ اسلام آباد پولیس اور انتظامیہ کے پانچ اعلی حکام اس کیس میں ۲۰۰۷ سے توہین عدالت کی کارروائی کا سامنا کر رہے ہیں ۔

اس وقت کے اسلام آباد پولیس کے سربراہ چودھری افتخار احمد، چیف کمشنر خالد پرویز، ڈپٹی کمشنر چودھری محمد علی، ڈی ایس پی جمیل ہاشمی اور انسپکٹر رخسار مہدی کے خلاف سپریم کورٹ نے کارروائی کا حکم دیا تھا جس کو انٹرا کورٹ اپیل میں چیلنج کیا گیا تھا ۔

سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ فیصلے والے دن تمام ملزمان عدالت میں حاضر ہوں ۔

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے