جسٹس صدیقی کی آبزرویشن حذف

اسلام آباد ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ نے لاپتہ افراد کے مقدمے میں جسٹس شوکت صدیقی کے حساس اداروں کے خلاف عدالتی حکم میں دی گئی آبزرویشن حذف کر دی ہے ۔ عدالت میں خفیہ اداروں کی درخواست پر سرکاری وکیل پیش ہوئے ۔

وزارت دفاع کی درخواست کی سماعت دو رکنی بنچ کی ۔ عدالتی حکم پر ایڈوکیٹ جنرل طارق محمود جہانگیری پیش ہوئے اور کہا کہرجسٹرار آفس نے بتایا ہے کسی بھی بنچ کی تشکیل کے لئے کوئی دباو نہیں ہے ۔ ایڈوکیٹ جنرل نے کہا کہ چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھی بنچ کی تشکیل میں کسی دباو کے تاثر کو رد کیا ہے ۔ عدالت کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے درخواست منظور کرتے عدالتی حکم سے جسٹس صدیقی کی آبزرویشن حذف کر دی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے