خان کے یو ٹرن جاری

وزیراعظم بن جانے کے بعد بھی عمران خان کے مشہور زمانہ یوٹرن جاری ہیں اور کچھ عرصہ قبل جن معاملات پر وہ پچھلی حکومتوں اور وزرائے اعظم کو تنقید کا نشانہ بناتے تھے اب وہی کچھ خود کرنے لگے ہیں ۔

عمران خان نے 27 مارچ 2016 کو ایک ٹوئٹ کے ذریعے وزیراعظم کو کرکٹ بورڈ کا چیئرمین لگانے پر تنقید کا نشانہ بنا کر لکھا تھا کہ ہم کرکٹ میں اس لئے ترقی نہیں کرتے کہ یہاں بورڈ کا چیئرمین بھی وزیراعظم مقرر کرتا ہے مگر خود وزیراعظم بن کر دوسرے دن ہی ٹوئٹ کر دیا کہ احسان مانی کو پاکستان کرکٹ بورڈ کا چیئرمین لگا دیا ہے ۔

بعد ازاں کسی نے وزیراعظم عمران خان کی توجہ پاکستان کرکٹ بورڈ کے نئے آئین کی طرف دلائی اور بتایا کہ اس کے مطابق اب چیئرمین کا تقرر وزیراعظم کا کام نہیں بلکہ بورڈ آف گورنرز کرتا ہے اس لئے آپ صرف ایک احسان مانی کو ممبر مقرر کریں تاکہ وہ بورڈ کے اندر الیکشن لڑ کر چیئرمین بن سکے ۔ یہ معلومات ملنے کے بعد وزیراعظم نے دوسری ٹوئٹ میں کہا کہ وہ احسان مانی کو بورڈ آف گورنر کا رکن مقرر کرتے ہیں اور وہ بعد میں طریقہ کار کے مطابق چیئرمین بنیں گے ۔

یاد رہے کہ پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی واپسی اور پاکستان سپر لیگ شروع کرا کے پاکستانی کرکٹ میں نئی روح پھونکنے والے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی نے اپنے عہدے سے استعفی دے دیاتھا جس کے بعد وزیراعظم عمران خان نے ٹویٹ کے ذریعے احسان مانی کو نئے چئیرمین کی حیثیت سے نامزد کیا ۔

نجم سیٹھی نے وزیراعظم عمران خان کو بھیجے گئے استعفے کے عکس کے ساتھ ٹویٹ کی اور لکھا کہ وہ اس بات کا انتظار کر رہے تھے کہ نئے وزیراعظم اپنے عہدے کا حلف لیں تاکہ وہ اپنا استعفیٰ پیش کرسکیں ۔ نجم سیٹھی کی ٹویٹ کے کچھ دیر بعد وزیر اعظم عمران خان نے اپنی ٹویٹ کے ذریعے اعلان کیا کہ وہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے سابق صدر احسان مانی کو پی سی بی کا چئیرمین نامزد کر رہے ہیں ۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے آئین کے تحت ملک کا وزیراعظم بورڈ کا پیٹرن انچیف ہوتا ہے اور پی سی بی کے آئین مطابق وزیراعظم اپنے دو نمائندے بورڈ آف گورنرز میں نامزد کرسکتا ہیں جس کے بعد وہ دس ارکان بورڈ کے نئے چئیرمین کا باضابطہ طور پر انتخاب کریں گے ۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا بورڈ آف گونرز اس وقت دس نمائندوں پر مشتمل ہے جن میں چار اداروں کے اور چار ریجنز کے نمائندے ہیں جبکہ دو نمائندے حکومت کے ہوتے ہیں جن کے نام وزیراعظم کی طرف سے دیے جاتے ہیں جن میں سے ایک چیئرمین منتخب ہوتا ہے ۔

73سالہ احسان مانی بین الاقوامی کرکٹ کی جانی پہچانی شخصیت ہیں ۔ احسان مانی اور عمران خان کی دوستی بڑی پرانی ہے ۔ احسان مانی شوکت خانم کینسر ہسپتال کے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں بھی شامل ہیں ۔ وہ ان دنوں خیبر پختونخوا میں گلیات ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے سربراہ کی حیثیت سے گلیات میں شجرکاری اور سیاحت کے منصوبوں پر کام کر رہے ہیں ۔

 

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے