سعودی ولی عہد کا ٹرمپ کو جواب

امریکی صدر ٹرمپ کے بیان کا تین دن بعد سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان نے جواب دے دیا ہے ۔ سعودی ولی عہد نے امریکی صدر کی اس تنبیہ کو مسترد کر دیا ہے کہ سعودی قیادت امریکی فوجی سہارے کے بغیر دو ہفتے بھی نہیں چلے گی۔

محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ سعودی عرب کا وجود امریکا کے بغیر بھی رہا ہے ۔ بلومبرگ ڈیلی کو انٹرویو میں محمد بن سلمان کا کہنا تھا کہ ہم امریکا کے احسان مند نہیں، ہم نے امریکا سے اسلحہ خریدا ہے، یہ مفت میں نہیں دیا گیا ۔ تاہم محمد بن سلمان نے یہ بھی کہا کہ ان کو ٹرمپ کے ساتھ کام کرنا پسند ہے ۔

یاد رہے کہ چند دن قبل ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے امریکی صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ امریکی فوجی امداد کے بغیر سعودی عرب کے شہنشاہ سلمان اقتدار میں نہیں رہ سکیں گے ۔

محمد بن سلمان نے کہا کہ سعودی عرب امریکہ سے ہر چیز پیسوں سے خریدتا ہے، اور جب سے ٹرمپ اقتدار میں آئے ہیں، سعودی عرب نے اگلے دس برسوں تک امریکہ سے اپنی ضرورت کا 60 فیصد اسلحہ خریدنے کا معاہدہ کیا ہے، ٹرمپ کے عہدۂ صدارت سنبھالنے کے بعد سے سعودی عرب نے امریکہ سے 110 ارب ڈالر کا اسلحہ خریدا ہے اور دوسرے دو طرفہ معاہدوں اور سرمایہ کاری کی کل مالیت 400 ارب ڈالر بنتی ہے ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے