نیب کو کراچی چھاپے سے کیا ملا؟

قو می احتساب بیورو کے حکام نے کراچی نے میں محکمہ اطلاعات سندھ کے دفتر پر چھاپہ مار کر ریکارڈ قبضے میں لیا ہے ۔ نیب کے ذرائع کے مطابق چھاپہ مار ٹیم کئی گھنٹے دفترمیں موجود رہی اور عملے سے پوچھ گچھ بھی کی گئی ۔ ذرائع کے مطابق نیب کی کارروائی شرجیل میمن کی وزارت کے دور میں ہونے والی اربوں روپے کی کرپشن اور سرکاری اشتہارات میں جعل سازی کا سراغ لگانے کا حصہ ہے ۔

نیب نے 2015سے2018کے دوران اشتہارات میں مبینہ کرپشن اور گریڈ 17کے افسران کی غیر قانونی بھرتیوں کے حوالے سے دو علیحدہ تحقیقات شروع کی ہیں ۔یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ ،میگا منی لانڈرنگ معاملے پر بھی نیب کی ٹیم نے کچھ فائلیں اور اہم ایکارڈ تحویل میں لیا ہے ۔ٹیم نے ڈائریکٹر اشتہارات اور دیگر عملے سے بھی پوچھ گچھ کی۔ذرائع کے مطابق نیب اہلکاروں نے فائلوں کے بنڈل گاڑی میں اپنے آفس منتقل کیئے ، ریکارڈ میں اشتہارات کی مد میں جاری رقوم، فراہمی اور دیگر ریکارڈ شامل ہیں۔ احتساب بیورو میں موجود ذرائع نے دعوی کیا ہے کہ سندھ حکومت نے ڈمی اخبارات کے نام پر اربوں کے اشتہارات جاری کئے ۔

نیب کی ٹیم نے محکمہ اطلاعات سندھ کے دو سینئر افسران سے پوچھ گچھ بھی کی ۔ دونوں افسران کا تعلق اشتہارات اور ہیومن ریسورس شعبوں سے تھا اور وہ ڈائریکٹر اور ڈپٹی ڈائریکٹر کے عہدوں پر فائز ہیں ۔ 2016 میں نیب نے سابق وزیر شرجیل انعام میمن اور اس وقت کے صوبائی سیکرٹری اطلاعات ذوالفقار شہلیانی ، محکمہ اطلاعات سندھ کے ڈائریکٹر منصور احمد راجپوت اور دیگر افسران کے خلاف مبینہ کرپشن پر تحقیقات شروع کی تھیں ، جس میں 2013سے 2015کے دوران صوبائی حکومت کی جانب سے الیکٹرانک میڈیا میں آگاہی مہم کے حوالے سے اشتہارات دیئے گئے تھے ، جس کی وجہ سے قومی خزانے کوتقریباً 3 ارب 2۷ کروڑ روپے کا نقصان پہنچا تھا۔اس حوالے سے محکمے کے سابق وزیر شرجیل میمن ، سابق سیکرٹری ذوالفقار شہلیانی ، ڈائریکٹر منصور راجپوت سمیت دیگر افسران کرپشن مقدمات کے باعث جیل میں ہیں اور یہ معاملہ احتساب عدالت کراچی میں زیر سماعت ہے۔نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ حال ہی میں2015 سے2018کے دوران اشتہارات میں مبینہ کرپشن اور گریڈ 17کے افسران کی غیر قانونی بھرتیوں کے حوالے سے حکام نے دو علیحدہ انکوائریاں شروع کی ہیں ۔جب کہ نیب کی جانب سے متعدد خطوط ارسال کیے جانے کے باجود محکمہ اطلاعات سندھ مکمل تفصیلات فراہم کرنے سے ہچکچارہا ہے۔نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ نیب کی ٹیم نے ان بے ضابطگیوں سے متعلق اہم ریکارڈ اپنے قبضے میں لے لیا ہے ، جو کہ مزید تحقیقات میں معاون ثابت ہوگا۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے