کاپی پیسٹ پر چینل کو جرمانہ

سپریم کورٹ نے نجی ٹی وی کی طرف سے غلط خبر چلانے پر جرمانے کا فیصلہ برقرار رکھا ہے ۔ جسٹس اعجاز الاحسن کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے سماعت کی

سپریم کورٹ نے نجی ٹی وی چینل کی جرمانہ ختم کرنے کی درخواست مسترد کرتے ہوئے پیمرا کا دس لاکھ جرمانے کا فیصلہ برقرار رکھا ۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ آپ نے دھماکے سے متعلق جھوٹی خبر چلائی، دھماکہ گلبرگ میں ہوا آپ نے ڈیفنس میں کرا دیا تھا ۔

جسٹس اعجاز الاحسن کا کہنا تھا کہ یہ انتہائی حساس معاملہ ہے آپ نے لوگوں کو پریشان کیا، آپ کو درست رپورٹنگ کرنا چاہیئے تھی، آپ کو ثابت کرنا چاہئے تھا کہ آپکی رپورٹ درست ہے ۔

سچ ٹی وی کے وکیل نے بتایا کہ ہم نے اپنے طور پر خبر نہیں چلائی بلکہ پی ٹی وی سے خبر لی تھی ۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ آپ کیا چاہتے ہیں کہ ہم پی ٹی وی سے جرمانہ لیں ۔

وکیل نےکہا کہ ہمیں دس لاکھ روپے کا جرمانہ کیا گیا، جرمانہ ہی کم کر دیں، میڈیا انڈسٹری کے حالات پہلے بہت خراب ہیں ۔ جسٹس اعجاز الاحسن کا کہنا تھا کہ آپ نے دس سیکنڈ کا اشتہار چلانا ہے اور  پیسے پورے ہوجائیں گے ۔

عدالت نے جرمانہ کم کرنے کی درخوست خارج کرتے ہوئے معاملہ نمٹا دیا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے