مجرم کا فاروق ستار اور وسیم اختر کے خلاف بیان

متحدہ قومی موومنٹ سے تعلق رکھنے والے ایک مبینہ ٹارگٹ کلر سعید بھرم عدالت میں جمع کرائے گئے بیان میں کہا ہے کہ دہشت گردی کی ہدایات ندیم نصرت، فاروق ستار، وسیم اختر اور حیدر عباس رضوی دیتے تھے ۔

عمر قید کی سزا کے خلاف اپیل میں سندھ ہائیکورٹ میں سعید بھرم نے بیان جمع کرایا ہے جس میں اعتراف کیا گیا ہے کہ وہ سندھ سیکرٹریٹ، پولیس ہیڈ آفس گارڈن پر حملے اور وکلا سمیت متعدد افراد کے قتل میں ملوث ہے، سعید بھرم کے مطابق دہشت گردی کی ہدایت ایم کیوایم کے ندیم نصرت، فاروق ستار، میئر کراچی وسیم اختر، حیدر عباس رضوی، محمد انور اور دیگر نے جاری کیں ۔

ملزم سعید بھرم نے اعترافی بیان میں کہا کہ 2005 اور 2006 میں ایم کیو ایم لندن کے محمد انور نے کال کرکے کہا کہ ایم کیو ایم بانی نے اپنے مخالفین کو ٹھکانے لگانے کے لیے ٹارگٹ کلنگ ٹیم تشکیل دینے کا حکم دیا ہے، ملزم نے صولت مرزا، اجمل پہاڑی و دیگر ٹارگٹ کلرز کے ہمراہ شہر میں متعدد ٹارگٹ کلنگ، جلاؤ گھیراؤ خوف و ہراس پھیلانے کی وارداتیں کرنے کا بھی اعتراف کیا ۔ عدالت نے ملزم کے وکیل خواجہ نوید کی عدم حاضری پر سماعت گیارہ فروری تک ملتوی کر دی ۔

اس سے قبل عدالت میں رینجرز کے وکیل نے بتایا کہ سعید بھرم کو انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نے عمر قید کی سزا سنائی ہے، اس کے خلاف ٹھوس شواہد ہیں لہذا سزا برقرار رکھی جائے ۔

 

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے