چیف جسٹس کا وکیل کو پلاٹ

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں مقدمات کی سماعت کے دوران کمرہ عدالت میں جسمانی معذور وکیل عزیز اے ملک کے سنائے دو اشعار چیف جسٹس ثاقب نثار کو اتنے پسند آئے کہ وکیل کو پلاٹ دینے کا اعلان کر دیا _

چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں چار رکنی بنچ نے سپریم کورٹ کے وکیلوں کے لیے اسلام آباد میں ہاؤسنگ سوسائٹی کے مقدمے کی سماعت کی _ ڈی جی ہاوسنگ اور بار ایسوسی ایشن کے عہدیداروں نے عدالت کو اپنے اپنے مؤقف سے آگاہ کیا _ اس دوران وہیل چیئر پر بیٹھے وکیل عزیز اے ملک نے عدالت میں اشعار سنا دئیے، انہوں نے چیف جسٹس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ

کرو ثاقب فراہم چار دیواری وکیلوں کو

ارے خدا تو لامکاں ہے اس کو گھر کی کیا ضرورت ہے

عزیز اے ملک کے بارے میں چیف جسٹس نے کہا کہ یہ بغیر کسی بریف کے بہت اچھے طریقے سے مدلل انداز میں بات کرتے ہیں، یہ لاہور، کوئٹہ اور اسلام آباد میں بھی پیش ہو جاتے ہیں اور معذوری ظاہر نہیں کرتے _

عزیز اے ملک نے دوسرا شعر پڑھا کہ

اے شاہ خوباں تو نے ہم کو کبھی نہ پوچھا

اہل کرم تو اکثر سائل کو ڈھونڈتے ہیں

اس پر چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ عزیز اے ملک کے لیے بھی بار ایسوسی ایشن ایک پلاٹ دے اس کی قیمت میں ادا کروں گا _ عدالت میں موجود افراد اور وکیلوں نے عزیز ملک کے اعلی ذوق کی خوب داد دی  _

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے