حنیف عباسی کو عمر قید

راولپنڈی میں ایفیڈرین کیس کی سما عت مکمل کرنے کے بعد انسداد منشیات کی خصوصی عدالت دن بارہ بجے محفوظ کیا گیا فیصلہ سنا دیا ہے ۔ عداکت نے چھ سال کیس کی سماعت کی ہے، حنیف عباسی کو عمر قید کی سزا سنادی گئی ۔

ایفیڈرین کیس میں آٹھ ملزمان حنیف عبا سی، ان کے بھا ئی با سط عبا سی، پارٹنر احمد بلال عادل ،غضنفر،ناصر خان ، سراج عبا سی، نزاکت اور محسن خورشید نامزد تھے ۔ ان تمام ملزمان کو شک کی بنیاد پر بری کر دیا گیا ہے ۔

اے این ایف نے 21جولائی 2012 میں حنیف عبا سی وغیرہ کے خلاف مقدمہ نمبر 41 بجرم 9/سی۔ 14/15 سی این ایس اے 1997 ودیگر دفعات کے تحت درج کیا، اے این ایف نے مقدمہ کے چار مکمل اور ایک ضمنی چالان عدالت میں پیش کیا، حنیف عباسی پر گریس فارما کے نام پر 2010 ، 500کلو ایفیڈرین سے ادویات بنا نے کی بجا ئے فروخت کرنے کا الزام ہے ۔

اے این ایف نے سال 2012 میں انکوائری شروع کی۔ حنیف عبا سی اس کیس میں ضمانت پر تھے، دیگر ملزمان 19 ستمبر 2013 کو گرفتار اور 10 اکتوبر کو ضمانت پر رہا ہو ئے، اے این ایف نے گزشتہ سال حنیف عبا سی کے بنک اکاؤنٹ اور اثاثوں سمیت فیکٹری منجمد کیا ۔

ایفیڈرین کیس کی سماعت چھ سال تک ہو تی رہی، اس دوران انسداد منشیات عدالت کے چھ جج تبدیل ہو ئے۔

این اے 60 سے مسلم لیگ ن کے ٹکٹ ہولڈر حنیف عبا سی چیئر مین پنجاب اسپورٹس اسٹیرئنگ کمیٹی کے چیئر مین بھی رہے ۔ کیس کی تاریخ دو اگست مقرر ہو نے کے باوجود شاہداورکزئی کی درخواست پر ہا ئی کورٹ نے روزانہ کی بنیاد ہر سما عت کا حکم جاری کیا ۔

ہائی کورٹ کے جسٹس عبا د الرحمن لودھی کے حکم پر 16جولائی کو سماعت روزانہ کی بنیاد ہر شروع ہو ئی تھی

ہائی کورٹ کے جج جسٹس عبا دالرحمن لودھی نے 21 جولائی کو اس کیس کا فیصلہ کر نے حکم دے رکھا تھا ۔ حالیہ سما عت کے دوران ٹرائل کورٹ نے متعدد بار اے این ایف کی کارکردگی پر اظہاربرہمی کے ساتھ سرزنش بھی کی ۔

متعلقہ مضامین