نیوزی لینڈ حملے میں باپ بیٹا بھی مارے گئے

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مسجد النور میں فائرنگ سے مارے جانے والوں میں پاکستان کے شہر ایبٹ آباد سے تعلق رکھنے والے نعیم راشد اور ان کے بیٹے طلحہ کی موت کی تصدیق ان کے رشتہ داروں نے کی ہے ۔

پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان کے مطابق ابھی تک حملے میں پانچ پاکستانی شہری لاپتہ ہیں ۔

ترجمان نے تصدیق کی ہے کہ نیوزی لینڈ کی 2 مساجد میں دہشتگردی کے واقعات میں ایک زخمی پاکستانی کی شناخت محمد امین ناصر کے نام سے ہوئی ہے جن کی تاریخ پیدائش یکم اکتوبر 1951ء ہے ۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق محمد امین کا تعلق حافظ آباد سے ہے۔ امین کی حالت نازک اور انتہائی نگہداشت کے یونٹ میں زیر علاج ہے ۔

ترجمان نے بتایا ہے کہ محمد امین کو گولیاں لگیں، علاج کی بہترین سہولیات کی فراہمی کیلئے کوشاں ہیں ۔

نیوزی لینڈ کی حکومت نے تاحال سارے مارے جانے والے افراد کی شناخت ظاہر نہیں کی ۔

سوشل میڈیا پر نعیم راشد اور ان کے بیٹے طلحہ کا نام ٹاپ ٹرینڈ ہے اور پوری دنیا سے صارفین نعیم راشد کی بہادری کی تعریف کر رہے ہیں جنہوں نے مسجد کے اندر حملہ آور کو روکنے کی کوشش کی ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے