پولیو ویکسین پر ہلاکت کا الزام

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع مانسہرہ میں پولیو ویکسین سے ایک تین سالہ بچے کی موت کا معاملہ سامنے آیا ہے ۔

صحافی نعمان شاہ کے مطابق مانسہرہ کے نواحی علاقہ تمر کھولا میں پولیو کے قطرے پلائے جانے کے بعد بچے کی موت کا الزام لگایا گیا ہے ۔

مرنے والے ساڑھے 3 سالہ نعیم شاہ کے چچا عبدالقادر نے دیگر ورثاء کے ہمراہ کنگ عبداللہ ہسپتال میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پولیو کے قطرے پینے کے بعد ان کے ہنستے کھیلتے بھتیجے کی حالت غیر ہو گئی ۔

”بچے کو اسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکا۔“

اس حوالے سے ضلعی ہیلتھ افسر ڈاکٹر شہزاد نے میڈیا کو بتایا کہ بچے کی موت پولیو ویکسین سے نہیں ہوئی۔

ادھر بچے کے والدین نے پوسٹمارٹم کروانے سے انکار کیا ہے جس کے بعد اس کی میت ورثاء کے حوالے کر دی گئی ۔

بچے کے طبی تجزیے کی رپورٹ سے موت کی اصل وجہ معلوم کی جا رہی ہے ۔

ڈی ایچ او کا کہنا تھا کہ بچے کے والدین نے پولیو ٹیم کو دو بار قطرے پلانے سے روکا ۔ ”سوموار اور منگل کو بچے کے والدین نے ٹیم کو واپس بھیجا کہ بچہ بیمار ہے ہم اس کا علاج کرا رہے ہیں ۔“

انہوں نے کہا کہ بدھ کو تیسرے روز اس بچے کو گراؤنڈ میں دیگر بچوں کے ساتھ قطرے پلائے گئے، دیگر درجنوں بچوں کو پولیو قطروں سے کوئی نقصان نہیں ہوا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے