فیس بک لائیو بند کیا جا رہا ہے؟

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک نے کہا ہے کہ وہ اپنے صارفین کی لائیو ویڈیو سٹریمنگ کے فیچر تک رسائی اور استعمال پر سخت اصول لاگو کر کے اس کو محدود کر رہی ہے ۔

فیس بک کا یہ بیان ایسے وقت سامنے آیا ہے جب نیوزی لینڈ کی وزیراعظم فرانسیسی صدر سے بدھ کو ملاقات میں عالمی رہنماؤں پر زور دے رہی ہیں کہ کرائسٹ چرچ میں مساجد پر حملوں کے بعد آن لائن تشدد دکھانے پر پابندیاں لگانے کے لیے اکھٹے ہوں ۔

یاد رہے کہ 15 مارچ کو کرائسٹ چرچ میں اکیلے حملہ آور نے 51 افراد کو دو مساجد پر حملے کرکے قتل کر دیا تھا اور اس واقعہ کو فیس بک کے ذریعے صارفین کو براہ راست دکھایا تھا ۔

اس واقعہ کے بعد نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کی حکومتوں نے سوشل میڈیا ویب سائٹس سے کہا تھا کہ وہ شدت پسند سے نمٹنے کے لیے مزید اقدامات کریں ۔ فیس بک کا دعوی ہے کہ اس نے حملے کی 15 لاکھ ویڈیوز کو اگلے 24 گھنٹوں میں اپنے نیٹ ورک سے ہٹایا تھا ۔

فیس بک نے بیان میں کہا ہے کہ وہ لائیو کے لیے ایک ایسی ’ون سٹرائیک‘ پالیسی متعارف کرا ہی ہے کہ جس کے تحت ایسے صارفین یہ فیچر عارضی طور پر استعمال نہیں کر سکیں گے جنہوں نے سائٹ پر کمپنی کے کسی بھی اہم نوعیت کے اصول کی خلاف ورزی کی ہو ۔ 

فیس بک کا کہنا ہے کہ پہلی بار خلاف ورزی کرنے والوں کے لیے لائیو کا فیچر ایک خاص مدت تک کے لیے معطل کیا جائے گا ۔ 

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے