لڑکیوں کی برہنہ ویڈیو والے گرفتار

یاسر حکیم ۔ صحافی/ راولپنڈی

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے شہر راولپنڈی میں پولیس نے ایم ایس سی کی طالبہ اور شادی شدہ لڑکی کے ساتھ زیادتی اور ویڈیو بنانے کے مقدمے میں پیش رفت کا دعوی کیا ہے۔

شہر کے پولیس ترجمان کے مطابق تھانہ سٹی پولیس نے لڑکی کو زیادتی کا نشانہ اور برہنہ ویڈو بنانے والے میاں بیوی کو گرفتار کر لیا ہے۔

تعجمان نے بتایا کہ کہ واقعہ کا مقدمہ تھانہ سٹی میں اغواء اور زیادتی کی دفعہ کے تحت درج تھا۔ ملزم قاسم کا عدالت سے جسمانی ریمانڈ حاصل کرلیا گیا جبکہ اس کی اہلیہ کرن کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھجوا دیا گیا ہے۔

سی پی او فیصل رانا کے مطابق ملزمان نے انکشاف کیا ہے کہ انہوں نے اب تک45لڑکیوں کی ویڈیوز بنائیں۔

ملزمان زیادتی کا نشانہ بننے والی کڑکیوں کی برہنہ ویڈیوز بھی بناتے تھے۔ پولیس نے ملزمان سے 10واقعات کی برہنہ ویڈیوز اورہزاروں برہنہ تصاویر بر آمد کر لی گئی ہیں۔

سی پی او فیصل رانا کے مطابق طالبہ زیادتی کے مقدمہ میں بیڈ شیٹ اور ٹشو پیپرز ڈی این اے ٹیسٹ کے لئے بجھوا دیئےگئے ہیں۔ ملزم قاسم کم عمر لڑکیوں کو اپنی بیوی کے زریعے ورغلاء کر زیادتی کا نشانہ بناتا تھا۔

سی پی او کا کہنا ہے کہ ملزم کی اہلیہ کرن زیادتی کی ویڈیو بناتی تھی۔ ایس پی راول ٹاؤن تھانہ کوملزم کی ہوس کا نشانہ بننے والی تمام بچیوں کے والدین سے رابطہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔

ہر واقعہ کی الگ الگ ایف آئی آر درج کر کے ملزمان کو الگ الگ چالان کیا جائے گا۔

متعلقہ مضامین