میڈیا سے بات پر دھمکی دی گئی

فہد شہباز خان ۔ صحافی / لاہور

پاکستان میں حزب اختلاف کی جماعت مسلم لیگ ن کی نیب کی زیر حراست رہنما مریم نواز نے کہا ہے کہ ان کو دھمکی دی گئی ہے کہ زبان کھولی تو بچوں سے ملنے نہیں دیا جائے گا۔

لاہور کی احتساب عدالت میں پیشی کے دوران موبائل کا ریکارڈنگ والا بٹن آن کر کے مریم نواز سے پوچھنے ہی والا تھا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدت ملازمت میں توسیع پر ان کا کیا رد عمل ہے، کہ مریم نواز نے کہا کہ "میں میڈیا سے گفتگو نہیں سکتی”۔

بطور صحافی وجہ پوچھی تو مریم نواز کا کہنا تھا کہ ان کو میڈیا سے گفتگو کرنے سے روک دیا گیا ہے۔ "وہ کہتے ہیں کہ اگر میڈیا پر گفتگو کی تو نیب حراست میں مجھے میرے بچوں سے نہیں ملنے
دیا جائے گا”۔

پوچھا کون کہتے ہیں؟ مریم نواز بولیں "نیب نے مجھے میڈیا پر گفتگو کرنے سے منع کیا ہے”۔

مزید استفسار کیا کہ کیا آپ نے مان لیا؟
انہوں نے جواب دیا کہ "میں کیا کرتی”۔ ان سے کہا اگر بچوں کی ملاقات پر پابندی ہوگی تو میڈیا یہ بات عوام تک پہنچائے گا کہ نیب مریم نواز کو ان کے بچوں سے ملنے کے بنیادی حق سے محروم کر رہی ہے۔

سینیٹر پرویز رشید جو مریم نواز کے ساتھ احتساب عدالت میں موجود تھے مجھ سے مخاطب ہوئے کہ "آپ ایک قیدی سے بحث کررہے ہیں”۔

اس سے پہلے کہ میں پرویز رشید صاحب کی خدمت میں کچھ عرض کرتا مریم نواز نے پرویز رشید کو مخاطب کیا "انکل دیکھیں نا مجھے کہا گیا ہے اگر میں میڈیا پر بات کروں گی تو مجھے میرے بچوں سے نہیں ملنے دیا جائے گا”۔

فہد شہباز خان ۔ لاہور

متعلقہ مضامین