’یوم دفاع پر کشمیر ہی ایجنڈا ہے‘

اکستان کی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ کشمیر پاکستان کی تکمیل کا نامکمل ایجنڈا ہے اور مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے۔ جب تک حل تک یہ پاکستان کا ایجنڈا رہے گا۔ 

راولپنڈی کے فوجی ہیڈ کوارٹر میں چھ ستمبر کو ملکی دفاع کی خاطر ڈٹ جانے والے فوجیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے منائے جانے والے یوم دفاع کی مرکزی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جنرل باجوہ نے کہا کہ وادی کشمیر میں ریاستی دہشتگردی عروج پر ہے اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں عالمی تنظیموں کے لیے لمحہ فکر ہیں۔ پاکستان کشمیریوں کو کبھی تنہا اور حالات کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑے گا۔

 جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ حالیہ دنوں میں پاکستان کی دہشت گردی کے خلاف جنگ دنیا کے لیے ایک مثال ہے۔ پاکستان نے اپنی ذمہ داریاں بھرپور طریقے سے پوری کی ہیں اور آج پاکستان میں امن کی بہتر فضا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ افغانستان میں پائیدار امن کی کوشش کی ہے، اور افغانستان میں امن پاکستان میں امن کی ضمانت ہے۔

خیال رہے کہ یوم دفاع کے ساتھ ساتھ آج یوم یکجہتی کشمیر بھی منایا جا رہا ہے جس کا مقصد انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں ہونے والے مظالم کے خلاف اور کشمیریوں کے ساتھ عوامی حمایت کا اعادہ کرنا ہے۔

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان یوم دفاع مظفر آباد میں منا رہے ہیں جہاں وہ کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کی تقریب سے خطاب کریں گے۔

یوم دفاع پر وزیراعظم عمران خان نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ ’ہماری مسلح افواج، قوم، سیاسی قیادت، پارلیمنٹ کے دونوں ایوان اور سوشل میڈیا  وادی کشمیر کی آئینی حیثیت میں تبدیلی کے یکطرفہ اورغیر قانونی بھارتی فیصلے کے خلاف یک آواز ہیں۔

ریڈیو پاکستان کے مطابق دارالحکومت اسلام آباد میں دن کا آغاز 31 اور صوبائی دارالحکومتوں میں 21 توپوں کی سلامی سے کیا گیا، جبکہ نماز فجر کے بعد مساجد میں ملکی سلامتی کے لیے دعائیں کی گئیں۔

متعلقہ مضامین