50 ملکوں کی کشمیریوں کے لیے آواز

سوئٹزر لینڈ کے شہر جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 50 سے زائد رکن ممالک نے کشمیر کی صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے علاقے سے کرفیو اٹھانے اور حراست میں لیے گئے افراد کو فوری رہا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

انسانی حقوق کونسل کے مشترکہ اعلامیے سے قبل پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے انسانی حقوق کونسل میں خطاب کیا۔ انہوں نے انڈیا کے زیرانتظام کشمیر میں گذشتہ ایک ماہ سے زائد عرصے کے دوران پیش آئے واقعات اور وہاں کے لاک ڈاؤن کے بارے میں رکن ممالک کو بتایا۔

اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل میں مشترکہ اعلامیہ پاکستان نے 50 سے زائد ممالک کی جانب سے پیش کیا۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ انڈیا عالمی میڈیا اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کو کشمیر کے دورے کی اجازت دے، انسانی حقوق کا احترام کیا جائے، علاقے میں طاقت خصوصاً پیلٹ گنز کا استعمال بند کیا جائے اور ذرائع مواصلات بحال کیے جائیں۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کمشنر کی سفارشات پر عمل درآمد کیا جائے۔

مشترکہ اعلامیے میں تمام ممالک کی جانب سے کہا گیا ہے کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جائے۔

خیال رہے کہ انسانی حقوق کی تنظیموں ہیومن رائٹس واچ اور ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی انڈیا سے کشمیر میں کرفیو ہٹانے اور تمام سیاسی قیدیوں کو رہا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

متعلقہ مضامین