اقوام متحدہ میں پہلے سیلفی، پھر تقریر

براعظم امریکہ کے مرکز میں واقع ملک ایل سلواڈور کے صدر نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس میں اپنے خطاب کا آغاز کرنے سے قبل فون سے اپنی سیلفی بنائی جس کو دنیا بھر میں براہ راست دیکھا گیا اور سوشل میڈیا پر یہ سیلفی ٹرینڈ کرنے لگی ہے۔

جمعرات کو عالمی فورم پر اپنے پہلے خطاب سے قبل 38 سالہ صدر نائب بوکیلی نے کہا کہ ’ایک لمحے کے لیے انتظار کریں۔‘ اس کے بعد انہوں نے اپنی جیب سے فون نکالا اور سیلفی لی۔

نائب بوکیلی نے اپنی تقریر شروع کرتے ہوئے کہا کہ ’یقین کریں، دنیا میں زیادہ لوگ میری اس سیلفی کو دیکھیں گے اور وہ نہیں سنیں گے جو میں کہوں گا۔‘

انہوں نے عالمی رہنماؤں پر زور دیا کہ دنیا میں بہتری لانے کے لیے اپنے ملکوں کے نوجوانوں کو سنیں اور ان کی بات پر توجہ دیں۔

نائب بوکیلی جون 2019 میں اپنے ملک کے صدر منتخب ہونے سے قبل سان سلواڈور شہر کے میئر تھے اور وہ سوشل میڈیا کے استعمال کے حوالے سے بہت زیادہ مشہور ہیں۔

ایل سلواڈور کے صدر نے اپنی صدارتی مہم میں فیس بک لائیو کا سب سے زیادہ استعمال کیا اور ان کی کامیابی کو بھی سوشل میڈیا کے زبردست اور مفید ہونے کا نتیجہ قرار دیا گیا۔

اپنے سوشل میڈیا کے لمحات کے لیے ہی صدر بوکیلی کی بیوی گبریلا نے اپنی شیر خوار بچی کو بھی اقوام متحدہ میں والد کی تقریر سننے کے لیے لایا تھا۔

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تقریر کے خاتمے کے فوری بعد صدر بوکیلی نے تصویر ٹوئٹر پر اپلوڈ کی جس کو ایک گھنٹے سے بھی کم وقت میں سات ہزار سے زائد لائکس ملے۔


متعلقہ مضامین