نواز شریف کا ردعمل

لندن میں اپنے خلاف احتساب عدالت کے فیصلے پر پریس کانفرنس میں ردعمل ظاہر کرتے ہوئے نواز شریف نے کہا ہے کہ قوم سیاسی مہروں کا مقابلہ کرے گی ۔  نواز شریف نے کہا کہ واپس آؤں گا اور ووٹ کی عزت کی بحالی کی جدوجہد جاری رکھوں گا، یہ سزائیں میری جدوجہد کا راستہ نہیں روک سکتیں ۔

 

انہوں نے کہا کہ مجھے متعدد مرتبہ ملک چھوڑنے کا کہا گیا،نوازشریف نے کہا کہ صحافیوں کو روکا جاتا ہے، مارا جاتا ہے، کچھ سال پہلے مار کر لاش دریا میں پھینک دی گئی، نیب کو گھناؤنے کاروبار کا آلہ کار بنایا جاتا ہے، بلوچستان سے ایک گمنام شخص کو سینیٹ چیئرمین جاتا ہے ۔ نواز شریف نے کہا کہ سیاسی و مذہبی جماعتوں کے دھرنے کروائے جاتے ہیں، ظلم حد سے بڑھتا ہے تو مٹ جاتا ہے، یہ ظلم مٹ کر رہے گا، یہ سزا 70 سالہ تاریخ کا رخ موڑنے کے جرم میں دی گئی، آئی ایس آئی اگلے دن محکمہ زراعت بن جاتی ہے، کیا محکمہ زراعت نے پہلے کبھی ٹکٹ واپس کروائے ہیں،یہ سزا اس عدالت کی نہیں، یہ سزا کہیں اور سے دی گئی ہے ۔

نواز شریف نے کہا کہ عدالت خودلکھ رہی ہےکہ استغاثہ کوئی کرپشن کاالزام ثابت نہیں کرسکایہ سزاکسی کرپشن لوٹ مارپرنہیں یہ پاکستان کی70سالہ تاریخ کارخ موڑنےپردی گئی ہے، میں یہ جدوجہداس وقت تک جاری رکھوں گاجب تک میری قوم اس خوف اور ڈر کی فضاسےنکل نہ آئے ۔

 

 

متعلقہ مضامین

One Comment

  1. کم از کم فیصلے سے پہلے انصاف کے تقاضے ہی پورے کر لئیے جاتے پریزمپشن پر تو فیصلے نہیں ہوتے کل اگر برطانوی وکیل یہ کہدے کے مریم نواز نے میری موجودگی میں ہی ٢٠٠٦ میں یہ کاغذات سائن کئے تھے تو ہماری عدلیہ کی ساکھ تو صفر ہو جائے گی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button