احمد شہزاد کو معطل کرکے نوٹس

پاکستان کرکٹ بورڈ نے مثبت ڈوپ ٹیسٹ مثبت آنے پر کرکٹر احمد شہزاد کو معطل کرتے ہوئے انہیں نوٹس بھیج دیا ہے اور جواب دینے کے لیے کہا ہے ۔ تاہم کرکٹ بورڈ نے یہ نہیں بتایا کہ احمد شہزاد نے کون سی ممنوعہ شے کا استعمال کیا تھا ۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے گذشتہ ماہ یہ اعلان کیا تھا کہ ایک کرکٹر کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت آیا ہے لیکن اس کرکٹر کے نام کا اعلان تمام قانونی تقاضے پورے کیے جانے کے بعد کیا جائے گا ۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے منگل کے روز پہلی بار اس بات کی باضابطہ طور پر تصدیق کی کہ جس کرکٹر کے مثبت ڈوپ ٹیسٹ کے بارے میں بتایا گیا تھا وہ احمد شہزاد ہیں ۔

واضح رہے کہ اس سال اپریل میں پاکستان کپ ایک روزہ کرکٹ ٹورنامنٹ کے دوران احمد شہزاد کا ڈوپ ٹیسٹ کیلئے خون کا نمونہ لیا گیا تھا ۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے احمد شہزاد کے ڈوپ ٹیسٹ کا نمونہ انڈین لیبارٹری بھیجا تھا جو واڈا سے منظور شدہ ہے ۔ پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس ٹیسٹ کی رپورٹ کی مزید تصدیق کے لیے پاکستانی حکومت کی اینٹی ڈوپنگ ایجنسی کی خدمات بھی حاصل کی تھیں جس کے بارے میں پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ اس کی رپورٹ منگل کو موصول ہوئی ہے ۔

احمد شہزاد کے پاس یہ گنجائش موجود ہے کہ وہ اپنے ڈوپ ٹیسٹ کے بی سمپل کے تجزیے کی درخواست 18 جولائی تک کرسکتے ہیں یا پھر 27جولائی تک وہ اینٹی ڈوپنگ ٹریبونل کے سامنے پیش ہونے کے لیے کہہ سکتے ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے نوٹس ملنے کے بعد احمد شہزاد عارضی معطلی کی وجہ سے قومی اور بین الاقوامی سطح پر کسی بھی طرح کی کرکٹ نہیں کھیل سکتے ۔

 

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے