مجھے اور میرے خاندان کو خطرہ ہے، جسٹس صدیقی

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ایک خط کے ذریعے ہائیکورٹ کے چیف جسٹس انور کاسی کو آگاہ کیا ہے کہ ان کی زندگی کو خطرات لاحق ہیں اس لئے بیرون ملک ورکشاپ میں شرکت کیلئے نہیں جا سکتے ۔

خط میں لکھا گیا ہے کہ مجھے مانچسٹر برطانیہ میں گیارہ سے اٹھارہ اگست تک ’’انسانی حقوق اور قانون کی حکمرانی؛ کے عنوان سے منعقد ہونے والی ورکشاپ میں شرکت کیلئے نامزد کیا گیا تھا مگر موجودہ حالات میں اس میں شرکت سے معذور ہوں ۔

جسٹس صدیقی نے لکھا ہے کہ میری اور میرے خاندان کے افراد کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہیں اور ایسے حالات میں اپنے خاندان کو خوف اور دباؤ میں چھوڑ کر باہر نہیں جا سکتا ۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے