فائرنگ پر حیران کن فوجی ردعمل

لاہور میں جسٹس اعجازالاحسن کے گھر پر فائرنگ کے مبینہ واقعہ کی تحقیقات کہاں تک پہنچی ہیں اس حوالے سے ابھی تک سپریم کورٹ نے کوئی بیان جاری نہیں کیا، چونکہ پہلے بیان میں کہا گیا تھا کہ چیف جسٹس خود اس معاملے کی نگرانی کر رہے ہیں اور جائزہ لے رہے ہیں اس لیے زیادہ تر لوگ عدالت کی جانب دیکھ رہے ہیں _

دوسری جانب فوج کے ترجمان کی جانب سے جاری مختصر بیان نے کئی سوالات کو جنم دیا ہے_ بیان میں فائرنگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ تمام شراکت دار ایسا ماحول یقینی بنائیں کہ ریاست کے ادارے امن و استحکام کیلئے موثر انداز میں اپنی کوششیں جاری رکھ سکیں  _

فوج کے ترجمان نے واضح نہیں کیا کہ شراکت داروں سے ان کی کیا مراد ہے، اور فائرنگ واقعہ میں کون کون شراکت دار ہے _

ISPR
Firing incident at the residence of Mr. Justice Ijaz ul Ahsan is condemnable. All stake holders should ensure secure environment for effective functioning of the state institutions and continue the efforts to consolidate improving peace and stability.

مزید دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے