افغانستان کو جناح ہسپتال مل گیا

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں پاکستان کی جانب سے بنائے گئے 200 بستروں کے محمد علی جناح ہسپتال کا افتتاح کیا گیاہے۔

یہ ہسپتال پاکستان کے افغانستان کی تعمیر و ترقی کے لیے ایک ارب ڈالر کے منصوبے کا اہم حصہ قرار دیا گیا ہے ۔

 پاکستان کے بانی سے منسوب ہسپتال کی افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی افغانستان کے نائب صدر محمد سرور تھے جبکہ پاکستان کے وزیرمملکت علی محمد خان نے بھی تقریب میں شرکت کی ۔


پاکستان کے دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر فیصل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ‘کابل میں محمد علی جناح ہسپتال کی تعمیر پر دو کروڑ 40لاکھ ڈالر لاگت آئی۔’
ان کاکہنا تھا کہ دو سو بستروں کا سٹیٹ آف دی آرٹ ہسپتال پاکستان نے افغانستان حکومت کے حوالے کیا ہے۔

پاکستان کے وزیرمملکت علی محمد خان اور افغان وزیرصحت ڈاکٹر فیروز الدین فیروز نے مشترکہ طور پر محمد علی جناح ہسپتال کا افتتاح کیا ۔ 
اس موقع پر وزیر مملکت علی محمد خان نے خطاب کرتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ جناح ہسپتال افغانستان میں صحت کے شعبے میں بہتری میں معاون ثابت ہوگا ۔

انہوں نے اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کا یہ پیغام بھی پہنچایا کہ’پاکستان افغان عوام کی فلاح کے لیے تمام ممکن اقدامات کرے گا۔’

علی محمد خان نے کہا کہ پاکستان کے وزیراعظم افغانستان کو ایک مستحکم، پرامن اور ترقیافتہ خود مختار اسلامی ملک کے طور پر دیکھنے کے خواہش مند ہیں ۔


افغانستان کے وزیر صحت نے اس موقع پر جناح ہسپتال کا تحفہ دینے پر پاکستان کی حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان کے صحت کے شعبے میں پاکستان کے تعاون کی تحسین کرتے ہیں ۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘جلال آباد میں نشتر کڈنی سنٹرکی تعمیر اور لوگر میں 19ملین ڈالر کی رقم سے زیر تعمیر سو بستروں کے امین اللہ ہسپتال کے لیے امداد کو بھی سراہتے ہیں۔’

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے