اب ایک قوم، ایک آئین ہے، مودی

کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے بعد انڈیا کے یوم آزادی پر اپنے خطاب میں وزیراعظم نریندر مودی نے کہا ہے کہ اب ہر انڈین یہ فخر سے کہہ سکے گا کہ ’ایک قوم ایک آئین‘۔

سرکاری ٹی وی پر انڈیا کے یوم آزادی کے موقع پر نئی دلی کے لال قلعے سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے کہا کہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کی وجہ سے وہاں کرپشن، اقربا پروری اور خواتین اور بچوں کے ساتھ ناانصافی جیسے مسائل تھے۔

وزیراعظم نریندر مودی نے مزید کہا کہ کہ ہمیں ایک نئی سوچ کی ضرورت تھی کہ کشمیر میں امن آئے۔

’ ہم مسائل کو طول نہیں دینا چاہتے، نئی حکومت کے 70 دنوں میں آرٹیکل 370 ایک تاریخ بن گیا ہے۔‘

اپنے خطاب کے اختتام پر 68 برس کے نریندر مودی نے ’جے ہند‘ کا نعرہ لگایا۔

وزیراعظم نریندر مودی نے اپنی تقریر میں مسلمانوں کی تین طلاق کے مسائل پر بھی بات کی اور کہا کہ ان کے سر پر تین طلاق کی تلوار لٹکتی تھی۔

’اسلامی ملکوں نے بھی تین طلاقوں کے مسئلے کو ختم کیا، اگر ہم جہیز جیسے مسائل کے خلاف آواز اٹھا سکتے ہیں تو کیوں نہ ہم تین طلاق کے مسائل پر آواز اٹھائیں۔‘

وزیراعظم مودی کی تقریر میں جو سب سے متنازع اعلان کیا گیا وہ چیف آف ڈیفنس سٹاف کے نئے عہدے کا تھا۔ 

وزیراعظم مودی نے کہا ’ہماری افواج انڈیا کا فخر ہے، مسلح افواج کے درمیان بہتر ہم آہنگی کے لیے میں ایک بڑا اعلان کرنا چاہتا ہوں کہ اب انڈیا کا ایک چیف آف ڈیفنس بھی ہوگا۔‘ 

متعلقہ مضامین